چاہت

آج سے پہلے اس نے کبھی ایسا نہیں سوچا تھا۔ اسے معلوم نہیں تھا کہ وہ اتنا گہرائی میں بھی سوچ سکتی ہے۔ مگر اب اسےتشویش ہونے لگی تھی کہ آ خر ایسا کیوں ہے؟ ساتھ ہی ساتھ اسے اپنے رب سے خو ف بھی محسوس ہو رہا تھا کہ کہی وہ سیدھے رستے سے تو نہیں بھٹک رہی۔ مگر اسے یقین تھا کہ اس کا رب اسے کبھی تنہا نہیں چھوڑے گا۔ اور قدم قدم پر اس کی رہنمائی کریں گا۔

اسی امید کے ساتھ وہ جینے لگی اور اس کو اطمینان نصیب ہو رہا تھا کہ جس کو رب العزت نے اس کہ لیے چنا ہے وہ اس کا ہی رہے گا۔ اس کے ساتھ ہی اس کی پر یشانی تھم گئی اور وہ ایک نئ امید اور اطمینانی کے ساتھ ابھرتے سورج کا نظارہ کرنے لگی۔

اس خیال کے ساتھ بے قرار ی کا کوئی سوال ہی پیدا نہیں ہو تا تھا۔

اے ابن آدم!!

ایک تیری چاہت ہے…. اور ایک میری چاہت ہے۔

مگر ہوگا وہی…. جو میری چاہت ہے!!

اگر تو نے خود کو سپرد کردیا اُس کے…. جو میری چاہت ہے۔

تو میں بخش دوں گا تجھ کو…. جو تیری چاہت ہے!!

اور اگر تونے نافرمانی کی اُس کی…. جو میری چاہت ہے

تو میں تھکا دوں گا تجھ کو اُس میں…. جو تیری چاہت ہے

اور پھر ہوگا وہی…. جو میری چاہت ہے!!​

--

--

on the way — live to learn — learn to serve

Love podcasts or audiobooks? Learn on the go with our new app.

Get the Medium app

A button that says 'Download on the App Store', and if clicked it will lead you to the iOS App store
A button that says 'Get it on, Google Play', and if clicked it will lead you to the Google Play store